Islamic Education

All About Islam

والدین اور اولاد کے حقوق اور فرائض

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedinmailFacebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedinmail

 

ہر دوسرے رشتے کی طرح اسلام نے والدین اور اولاد پر بھی حقوق اور فرائض لاگو کئے ہیں۔ اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات ہے اور ہر رشتے کو اس کی حدود اور فرائض میں باندھا گیا ہے۔ انسانوں پر ذمہ داریاں لاگو کر کے ان میں ربط قائم کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ والدین اور اولاد کے حقوق و فرائض یہ ہیں

اولاد کے حقوق

پیدائش سے پہلے کے حقوق

اچھا شریک حیات چننا

یہ اولاد کا حق کہ جب ایک انسان اپنا شریک حیات چنے تو یہ سوچ کر اور دیکھ کر چنے کہ وہ اس کی اولاد کی پرورش کس طریق سے کرے گا۔ کسی کی خوبصورتی یا دولت کو معیار بنانا غلط ہے اور نیک فطرت اور سیرت کا چناؤ بہترین ہے

زندگی کا حق

اولاد کا ایک حق یہ ہے کہ اسے زندہ رکھا جائے نہ کہ کسی خوف کے پیش نظر اولاد کو رحم میں ہی قتل کر دیا جائے

وراثت کا حق

یہ بھی ایک اولاد کا حق ہے کہ جیسے ہی وہ ماں کے رحم میں آئے اس کا والد کی جائداد اور وراثت میں حصہ بن جاتا ہے۔ اگر والد اولاد کے پیدا ہونے سے پہلے وفاے پا جایے پھر بھی بچہ باپ کی جائداد میں حصہ دار ہو گا۔.

وصیت کا حق

جب اولاد ماں کے رحم میں موجود ہو تو والدین پر لازم ہو جاتا ہے کہ وہ اپنی وصیت میں اس کو بھی شامل کر لیں

حدود کی سزا

جب ایک بچہ ماں کے رحم میں موجود ہو تو اس کی ماں پر حد لاگو نہیں ہوگی۔ کیونکہ یہ سزا بچ کی جان کے لئے خطرہ ثابت ہو سکتی ہے

نان و نفقہ کا حق

ایک باپ اپنی اولاد کے اخراجات اٹھانے کے لئے اسی وقت سے زمہ دار ہو جاتا ہے جب بچہ ماں کے رحم میں آ جاتا ہے۔ اگر میاں بیوی کو طلاق بھی دے دے تو بھی اس بچے کے نان و نفقہ کی ذمہ داری باپ کی ہی ہے

ولادت کے بعد حقوق

نومولود کے منہ میں کچھ میٹھا ڈالنا اولاد کا حق ہے۔ کھجور ڈالنا سنت ہے۔ ایک بہت چھوٹے کجھور کے ٹکڑے کو منہ میں ڈال کر ریشہ ریشہ کر لیا جائے اور اولاد کے منہ میں ڈالا جائے

۔ نومولود کے کان میں آذان دینا

۔ نومولود کو اچھا سا نام دینا

۔ لڑکے کے ختنے کروانا

۔ نومولود کا سر مونڈنا

۔ سر کے بالوں کے برابر سونے یا چاندی کا صدقہ دینا

۔ لڑکی کے لئے ایک اور لڑکے کے لئے دو بکروں کی قربانی دینا

۔ بچے کو خوراک، گھر مہیا کرنا

۔ بچے کی اچھی تربیت کرنا

۔ بچے کو قرآن سکھانا

۔ بچے کو بنیادی عربی سکھانا تاکہ وہ قرآن کو بغیر کسی مشکل کے پڑھ اور سمجھ سکے

۔ اولاد کے سامنے بہترین مثال بننا

۔اولاد کو اچھی تعلیم دینا

۔ بچوں کی عزت کرنا

۔ بچے کو اسلامی فرائض کی تعلیم دینا جیسے نماز، روزہ، صدقہ

۔ ان کی خواہشات کا خیال رکھنا

۔ اولاد کی خواہشات کو دبایا نہ جائے

۔ شادی کے لئے ان کی مرضی پوچھی جائے

۔ جب اولاد بالغ ہو جائے تو انہیں اپنی زندگی کے فیصلے کرنے دیں

۔ بچوں سے پیار کریں

۔ بچوں کے لئے دعا کریں

۔ بچوں کو مت ماریں

۔ بچوں کو بددعا مت دیں

۔ بچوں کے سامنے دوغلاپن مت کریں تاکہ بچے بھی اس سے بچ سکیں

۔ حقیقت پسندی سے کام لیں اور اولاد کو اپنے زمانے کے اصول و ضوبط پر چلانے کی کوشش نہ کریں

۔ اپنی خواہشات کا بوجھ ان پر مت ڈالیں

۔ بچوں میں تفریق نہیں کریں

۔ بچوں پر تشدد مت کریں

۔ بچوں سے پیار سے بات کریں

۔ بچوں کے فیصلوں پر یقین کریں

۔ بچوں کو بے عزت مت کریں

بچوں کے حقوق نہ پورے کرنے کے نقصانات

اگر بچوں کے حقوق پورے نہ کئے جائیں تو مندرجہ ذیل نا قابل تلافی نقصانات ہوسکتے ہیں

۔ وہ اچھے مسلمان نہیں بنیں گے

۔ اولاد کی وجہ سے بچوں کو نقصان اٹھانا پڑے گا

۔ بچے بری عادات کا شکار ہو سکتے ہیں

۔ بچے منافق بن سکتے ہیں

۔ بچے والدین سے منحرف ہو سکتے ہیں

۔ بچے والدیں کی عزت نہیں کرتے

۔ بچے والدین کو چھوڑ کر جا سکتے ہیں

۔ بچے دماغی امراض کا شکار ہو سکتے ہیں

والدین کے حقوق اور اولاد کے فرائض

فرائض کی طرح اولاد کے حقوق بھی ہیں جن کا پورا کرنا اولاد پر لازم ہے۔اولاد کا فرض ہے کہ

۔ والدین کا احترام کریں

۔ ان سے محبت کریں

۔ والدین سے شفقت سے پیش آئیں

۔ والدین پر اعتماد کریں

۔ والدین کے ساتھ تحمل سے پیش آئیں

والدین کے ساتھ صبر سے پیش آئیں

۔ انہیں گھر سے باہر نہ نکالیں

۔ ان کے شکرگزار رہیں

۔ ان کے لئے دعا کریں

۔ والدین سے جھگڑا مت کریں

۔ ان کو خوش رکھیں

۔ ان کی خواہش کا احترام کریں

۔ اسلام کی حدود میں رہ کر ان کی اطاعت کی جائے

۔ اگر والدین سے اختلاف رائے ہو تو انہیں آرام سے بتایا جائے

۔ والدین کو نظرانداز نہیں کرنا چاہیے

۔ جب والدین بوڑھے ہو جائیں تو ان کو اپنے پاس رکھیں

۔ والدین کو مارا پیٹا مت جائے

۔ ان کی خواہشات کا خیال رکھا جائے

والدین کی وفات کے بعد ان کے حقوق

۔ والدین کی وصیت پر عمل کیا جائے

۔ ان کے لئے دعا کی جائے

۔ ان کے لئے صدقہ کیا جائے

۔ اچھے اعمال کئے جائیں جن سے جنت میں والدین کا درجہ بلند ہو

۔ والدین کے قرض اتارے جائیں

 

اگر اس مکالمے میں ہم سے کوئی غلطی یا کوتاہی ہوئی ہے تو براہ مہربانی غلطی کی نشاندہی کر کے ہماری اصلاح میں مدد کیجیئے۔ اللہ ہماری چھوٹی بڑی غلطیوں کو معاف فرمائے اور ہماری اس کاوش کو اپنی بارگاہ میں قبول و مقبول فرمائے۔اللہ اس کاوش کو ہمارے خاندان کے لئے نجات کا موجب بنائے اور دین پر ہماری پکڑ کو اور مضبوط کرے۔آمین

Next Post

Previous Post

Leave a Reply

© 2019 Islamic Education

Theme by Anders Norén