Islamic Education

All About Islam

غربا کے حقوق

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedinmailFacebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedinmail

 

 

اسلام نے انسان کو ہر روپ میں حقوق عطا کئے ہیں کیونکہ اسلام ایک حقیقت پسند مذہب ہے۔ اسلام میں غریبوں کے بھی حقوق ہیں. زکوۃ اسلامی ٹیکس ہے جو ہر صاحب استطاعت مسلمان پر فرض کیا گیا ہے تاکہ معاشرہ ترقی کر سکے۔ اسلامٰ ایک ہی طبقے کے لوگوں میں جمع ہوتی دولت کے مخالف ہے اور تمام امت کے اندر دولت کی نقل و حمل کا قائل ہے

غربا کون ہیں؟

غریب وہ ہے جس کے پاس زندگی گزارنے کے عام وسائل نہ ہوں. قرآن میں غریبوں کے لئے مسکین کا لفظ استعمال کیا گیا ہے جس سے مراد ہے ایک ہی حالت میں رک جانا. مسکین وہ ہے جو اللہ کی مرضی سے غربت کی حالت میں تک جاتا ہے۔

قرآن سے غربا پر خرچ کرنے کی اہمیت

ساری اچھائی مشرق اور مغرب کی طرف منہ کرنے میں ہی نہیں بلکہ حقیقتًا اچھا وہ شخص ہے جو اللہ تعالٰی پر قیامت کے دن پر فرشتوں پر کتاب اللہ اور نبیوں پر ایمان رکھنے والا ہو جو مال سے محبت کرنے کے باوجود قرابت داروں یتیموں مسکینوں مسافروں اور سوال کرنے والوں کو دے غلاموں کو آزاد کرے نماز کی پابندی اور زکٰوۃ کی ادائیگی کرے جب وعدہ کرے تب اسے پورا کرے تنگدستی دکھ درد اور لڑائی کے وقت صبر کرے یہی سچّے لوگ ہیں اور یہی پرہیزگار ہیں ۔ سورت البقرہ آیت 177

اے ایمان والو! اکثر علماء اور عابد لوگوں کا مال ناحق کھا جاتے ہیں اور اللہ کی راہ سے روک دیتے ہیں اور جو لوگ سونے چاندی کا خزانہ رکھتے ہیں اور اللہ کی راہ میں خرچ نہیں کرتے انہیں دردناک عذاب کی خبر پہنچا دیجئے ۔  سورت التوبہ آیت 34

غربا کے حقوق

اسلام میں غریبوں کو مندرجہ ذیل حقوق دیئے ہیں

۔ اگر وہ مدد مانگیں تو ان کی مدد کی جائے

۔ اگر کوئی غلام ہے تو اسے آزاد کروایا جائے

۔ان کو زکوۃ ادا کی جائے

۔ اللہ تعالیٰ کے حضور امیر اور غریب میں کوئی فرق نہیں ہے

۔ غریبوں پر رحم کرنا چاہیے

۔ غریبوں کی مدد کرنی چاہیے

۔ ان پر مال خرچ کرنا چاہیے

 ۔ ان پر ظلم و ستم نہ کیا جائے

۔ ان سے محبت سے بات کی جائے

۔ ان کی بے عزتی مت کی جائے

۔ ان کے حقوق کو سلب نہ کیا جائے

۔ ان سے اچھا سلوک روا رکھا جائے

۔ان کی ضروریات کا خیال رکھیں

۔ اپنی امداد کے بدلے میں ان سے غلط کام نہ کروائے جائیں

۔ ان کی مدد کر کے احسان مت جتایا جائے

۔ ان کو غربت کا احساس نہ دلایا جائے

غربا کی مدد کے فوائد

۔ غلام کو آزاد کروانا عبادت ہے

۔ غلام کو آزاد کروانا گناہوں کا کفارہ ہے

۔ روزہ توڑنے کی صورت میں غرباء کو کھانا کھلانا بھی اس گناہ کا کفارہ ہے

۔ اگر کسی وجہ سے روزہ نہ رکھا جا سکے تو غرباء کو کھانا کھلانے سے مقصد پورا ہو جاتا ہے

۔ زکوۃ دینا انسان کہ دولت کو پاک کرتا ہے

۔ جب انسان ضرورتمند کی ضرورت پوری کرتا ہے تو اللہ خوش ہوتا ہے

۔ یہ اللہ کی قربت پانے کا زریعہ ہے

غربا کی مدد حدیث سے ثابت

صفوان بن سلیم تابعی اس حدیث کو مرسلاً روایت کرتے تھے کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا بیواؤں اور مسکینوں کے لیے کوشش کرنے والا اللہ کے راستہ میں جہاد کرنے والے کی طرح  ہے یا اس شخص کی طرح ہے جو دن میں روزے رکھتا ہے اور رات کو عبادت کرتا ہے ۔صحیح بخاری کتابب اچھے اخلاق حدیث 6006

غربا کی مدد نہ کرنے کی سزا

جب ایک انسان غرباء کی مدد نہیں کرتا تو اللہ تعالیٰ اسے قیامت کے دن سخت سزا دے گا۔

 

 

اگر اس مکالمے میں ہم سے کوئی غلطی یا کوتاہی ہوئی ہے تو براہ مہربانی غلطی کی نشاندہی کر کے ہماری اصلاح میں مدد کیجیئے۔ اللہ ہماری چھوٹی بڑی غلطیوں کو معاف فرمائے اور ہماری اس کاوش کو اپنی بارگاہ میں قبول و مقبول فرمائے۔اللہ اس کاوش کو ہمارے خاندان کے لئے نجات کا موجب بنائے اور دین پر ہماری پکڑ کو اور مضبوط کرے. آمین 

Next Post

Previous Post

Leave a Reply

© 2019 Islamic Education

Theme by Anders Norén