Islamic Education

All About Islam

شہادت

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedinmailFacebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedinmail

توحید اور شہادت کا مطلب

توحید کا مطلب ہے کہ اللہ ایک ہے وہ واحد ہے۔ شہادت کا مطلب ہے مشاہدہ کرنا۔ کسی بات کا شاہد ہونا۔ شہادت ایمان کا کھلا اعلان اور اعتراف کرنا ہے۔

شہادت کی وضاحت

شہادت دین اسلام کا سب سے اہم ستون اور رکن ہے جس پر اسلام کی بنیاد کھڑی ہے۔  اگر انسان اللہ کے واحد ہونے کی شہادت نہیں دیتا اور نہ ہی اسے دل سے مانتا ہے مگر باقی ارکان مکمل کرتا ہے تو اسے مسلمان نہیں کہا جائے گا۔

دوسرے مذاہب کے لوگ بھی روزے رکھتے ہیں۔ اپنے مذہب کے مطابق نماز پڑھتے ہیں۔ اپنے مال کا کچھ حصہ غریبوں میں بانٹتے ہیں اور اپنے مقدس مقامات پر جا کر عبادت بھی کرتے ہیں۔ مگر ان سب کاموں کے کرنے کے باوجود وہ مسلمان نہیں کہلائیں گے کیونکہ وہ توحید کی شہادت نہیں دیتے۔ اسلام ایک عمارت ہے اور توحید اس عمارت کا دروازہ ہے۔

نظریہ توحید 

توحید سے مراد ہے کہ اللہ ایک ہے۔ وہ واحد ہے۔ سورت اخلاص اللہ کی توحید کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

 اسکے علاوہ سورت الصافات آیت 35میں نھی اللہ پاک فرماتے ہیں 

“یہ وہ ( لوگ ) ہیں کہ جب ان سے کہا جاتا ہے کہ اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں تو یہ سرکشی کرتے تھے ۔ “

سورت محمد آیت 19 میں بھی اللہ پاک نے فرمایا ہے 

سو ( اے نبی! ) آپ یقین کرلیں کہ اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں اور اپنے گناہوں کی بخشش مانگا کریں اور مومن مردوں اور مومن عورتوں کے حق میں بھی اللہ تم لوگوں کی آمد ورفت کی اور رہنے سہنے کی جگہ کو خوب جانتا ہے۔   

شہادت کے کلمات

شہادت دینے کے لئے اسلام میں دو کلمات سب سے زیادہ مقبول اور معروف ہیں اور ان کا ثبوت قرآن اور حدیث سے بھی ملتے ہیں۔

کلمہ توحید 

لا إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ مُحَمَّدٌ رَسُولُ اللہ

اور 

أَشْهَدُ أنْ لا إلَٰهَ إِلَّا اللهُ وَحْدَهُ لَا شَرِيْكَ لَهُ وَأشْهَدُ أنَّ مُحَمَّدًا عَبْدُهُ وَرَسُولُهُ 

 شہادت کے پہلو

شہادت کے دو پہلو ہیں۔

۔ توحید پر ایمان

۔ حضرت محمد کے آخری نبی ہونے پر ایمان 

توحید پر ایمان

توحید پر ایمان سے مراد ہے کہ اللہ کی واحدانیت پر ایمان ہو کہ اللہ ایک ہے۔ اس کا کوئی ثانی نہیں ہے۔ نہ وہ کسی کا محتاج ہے اور نہ ہی اس کا کوئی مدد گار ہے۔ وہ ہر قسم کے شریک سے پاک ہے ۔ اس کے علاوہ کوئی اس کائنات کا مالک نہیں ہے اور وہ اکیلا ہی عبادت کے لائق ہے۔

حضرت محمدؐ پر ایمان

شہادت کا دوسرا پہلو حضرت محمد کے آخری نبی ہونے پر ایمان ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ ہر مسلمان کو یقین ہونا چاہیئے کہ حضرت محمد اللہ کے رسول ہیں اور اس کے برگزیدہ بندے ہیں جو اللہ کی عبادت کرتے ہیں۔ یہودی اللہ کی واحدانیت پر یقین رکھتے ہیں مگر وہ حضرت محمد کے آخری نبی ہونے کو نہیں مانتے۔ اس لئے وہ اسلام کے دائرہ سے خارج ہیں۔

  روح شہادت

شہادت کے لئے سب سے لازمی ہے کہ شہادت دینے والا اپنی آزاد مرضی سے اور کسی بھی دباؤ کے بغیر شہادت دے۔ صرف زبان سے ادا کیا جانا ضروری نہیں  بلکہ ضروری ہے کہ اس کو سمجھ کر اس پر ایمان لایا جائے۔

   شرائط شہادت

 درج ذیل شرائط کا پورا کرنا شہادت کے لیے ضروری ہے۔ 

توحید

شہادت کی سب سے پہلی شرط توحید پر یقین کامل ہے۔ اللہ نے جب حضرت آدم کو پیدا کیا تو انہیں سب سے پہلے الفاظ لا الہ الا اللہ سکھائے۔

اخلاص

اس سے مراد ہے کہ اللہ کی عبادت خلوص دل اور صاف نیت سے کرنی چاہیئے۔ انسان جب عبادت یا کوئی بھی کام دکھاوے کے لئے کرتا ہے تو اس کام کا انسان کو کوئی فائدہ نہیں ہوتا۔

قبول

اس سے مراد ہے کہ انسان اللہ کے ہر فیصلے کو تہہ دل سے قبول کرے۔ انسان روحانی اور شعوری طور پر اللہ کے ہر فیصلے کو صحیح تسلیم کرے۔

انقیاد

انقیاد سے مراد ہے جھک جانا۔ اس جگہ انقیاد منفی معنی میں استعمال نہیں ہو گا بلکہ یہاں انقیاد سے مراد ہے کہ انسان اللہ کے ہر فیصلے کو مانے اور اس کے سامنے سر تسلیم خم کر دے۔

اسلام

اس سے مراد ہے سلامتی پھیلانا۔ مطلب جب انسان اللہ کی واحدانیت کی شہادت دے گا تو وہ سلامتی پھیلانے والا ہونا چاہیئے۔

توکل

توحید پر یقین رکھنے کے لئے ضروری ہے کہ انسان کا اللہ پر کامل یقین ہو۔ ہر پل اور ہر حال میں اللہ پر توکل ہی ایمان کی سب سے اہم نشانی ہے۔

شکر

شہادت کی ایک اہم شرط یہ بھی ہے کہ انسان ہر حال میں اللہ کی دی ہوئی نعمتوں کا شکر ادا کرے۔

محبت

اس سے مراد ہے کہ اللہ سے محبت کی جائے جیسا کہ اس سے محبت کرنے کا حق ہے۔

شہادت کےدوسرےحصے کی شرائط

شہادت کا دوسرا حصہ حضرت محمد کی ذات پر ایمان ہے اس کی بھی کچھ شرائط ہیں۔

اتباع

اتباع سے مراد ہے پیروی کرنا۔اس سے مراد ہے کہ حضرت محمد کی سنت پر عمل کیا جائے۔ اللہ نے توحید ، نماز اور دوسری باتوں کو حکم تو دے دیا مگر ان کو ادا کرنے کا طریقہ اور قوائد و ضوابط ہمیں ہمارے پیارے نبی نے سکھائے۔

توقیر

اس سے مراد ہے کہ حضرت محمد کی عزت اور ناموس کو مد نظر رکھا جائے ہر حال میں۔ 

ہدایت

نبی کی ذات ہمارے لئے ہر پل اور ہر حال میں رہنمائی ہے اور ہمیں ان سے رہنمائی لینی چاہیئے تاکہ زندگی آسان ہو سکے۔

محبت

 شہادت کی ایک شرط یہ بھی ہے کہ اللہ کے نبی سے اس طرح محبت کی جائے جیسا کہ محبت کرنے کا حق ہے۔

جب شہادت کے یہ سب شرائط پوری ہوں گی تو انسان دائرہ اسلام میں داخل ہو جاتا ہے۔ 

اگر اس مکالمے میں یا ان ناموں کا مطلب بیان کرنے میں ہم سے کوئی غلطی یا کوتاہی ہوئی ہے تو براہ مہربانی ہماری غلطی کی نشاندہی کر کے ہماری اصلاح میں ہماری مدد کیجیئے۔ اللہ ہماری چھوٹی بڑی غلطیوں کو معاف فرمائے اور ہماری اس کاوش کو اپنی بارگاہ میں قبول و مقبول فرمائے۔ آمین

Next Post

Previous Post

1 Comment

  1. Bint-e-Ikhlaq November 25, 2018 — Post Author

    The first pillar is shahdah not touheed. Tauheed means oneness of Allah ehereas shahdah means to give witness about the oneness and sovereignty of Allah and witness about our beloved Prophet (p.b.u.h) as the last prophet. Thx alot

Leave a Reply

© 2019 Islamic Education

Theme by Anders Norén